Home » مسلمان وہ واحد قوم ہیں جو اپنے مذہب اور عقیدے کے معاملے میں غیرت مند ہیں۔
اسلام بلاگ معلومات

مسلمان وہ واحد قوم ہیں جو اپنے مذہب اور عقیدے کے معاملے میں غیرت مند ہیں۔

[ اینڈریو ٹیٹ (Andrew Tate)امریکہ کے معروف باکسر ہیں۔ وہ تین مرتبہ انٹرنیشنل سپورٹ کراٹے ایسوسی ایشن کے مقابلوں میں عالمی فاتح قرار پا چکے ہیں۔ حال ہی میں انہوں نے ایک انٹرویو میں اسلام اور مسلمانوں کے متعلق اظہارِ خیال کیا ہے جو شاید بیسیوں مفکرین کے ہزاروں صفحات پر بھاری ہے. ابو الحسین آزاد]اینڈریو کہتے ہیں:”اگر آپ کو فیمنزم سے کوئی مسئلہ ہے اسلام اسے حل کر دے گا۔اگر آپ کا مسئلہ یہ ہے کہ آپ کی بیوی آپ کی بات نہیں مانتی اسلام اسے حل کر دے گا۔اسلام ان بہت سے مسئلوں کا حل پیش کرتا ہے جو آج کے زمانے میں مردوں کو درپیش ہیں۔ یہ مسائل جن پر ہم اس پروگرام میں بحث کر رہے ہیں اسلام ان سب کو حل کر سکتا ہے۔

میں مسلمان نہیں ہوں ۔ میں ایک آرتھوڈکس مسیحی ملک میں رہتا ہوں،آرتھوڈکس چرچ میں جاتا ہوں اور ماہانہ بیس ہزار ڈالرکی فنڈنگ کلیسا میں دیتا ہوں۔ وہاں پر چرچ کے پاس بہت زیادہ طاقت ہے۔اسی لیے مجھے یہ پسند ہے کہ چرچ والوں سے میری دوستی ہو۔اسی وجہ سے میں انہیں پJaamiیتا ہوں اور اسی وجہ سے میں یہ کہتا ہوں کہ میں آرتھوڈکس عیسائی ہوں۔لیکن اگر مجھے کسی ایک مذہب پر جوا کھیلنے کا موقع ملے ۔ جیسا کہ اسٹاک مارکیٹ میں مجھے بیٹنگ کرنا پڑے تو میں اسلام پر جوا کھیلوں گا۔

کیوں کہ مسلمانوں میں برداشت کا مادہ نہیں پایا جاتا۔ میں یہ بات ان کی بے ادبی یا بے احترامی کرنے کی غرض سے نہیں کہہ رہا۔ بلکہ حقیقت یہ ہے کہ اگر آپ ہر چیز کو تحمل کے ساتھ برداشت کرنا شروع ہو جائیں تو اس کامطلب یہ ہے کہ آپ کسی چیز کو بھی نہیں مانتے۔(آپ کا کوئی عقیدہ اور نظریہ ہے ہی نہیں۔)عیسائیوں کے رویے میں اب بہت زیادہ تسامح اور برداشت آ گئی ہے۔ آپ چرچ چلے جائیں۔ لڑکیاں ہفتے کی رات بدکاری کرتی ہیں ، پھر اتوار کی صبح چرچ چلی جاتی ہیں پھر اسی اتوار کی شام دوبارہ بدکاری میں لگ جاتی ہیں۔ اور ایسا کرتے ہوئے انہیں کسی قسم کی مشکل پیش نہیں آتی۔

جب آپ ہم جنس پرستوں کے حقوق کا دفاع کرتے ہیں جب کہ آپ کی کتابِ مقدس (بائبل) یہ کہہ رہی ہے کہ ہم جنس پرستی درست نہیں ہے تو پھر یہ کیا؟ آپ ایمان کس چیز پہ رکھتے ہیں؟ آپ تو ہر چیز کو تحمل کے ساتھ برداشت کر رہے ہیں۔ آپ کے سامنے تو سرے سے کوئی ہدف ہے ہی نہیں۔میں آج لندن کی گلیوں میں ایک ایسی شرٹ پہن کر چل سکتا ہوں کہ جس پر لکھا ہو کہ یسوع میسح ہم جنس پرست تھے(نعوذ باللہ)۔ مجھے کوئی کچھ بھی نہیں کہے گا۔ لیکن اگر ایسا میں مسلمانوں کے پیغمبر کے بارے میں کروں تو یقینا سڑک کے آخر تک پہنچنے سے پہلے پہلے قتل کردیا جاؤں گا۔مسلمانوں کو اپنے مقدسات کی حرمت اور عزت کا اتنا خیال ہے۔
اور میں ان لوگوں کا بے حد احترام کر تا ہوں جو ان چیزوں کا دفاع کرتے ہیں جن پر ان کا ایمان ہوتا ہے۔اس کا اس بات سے کوئی تعلق نہیں کہ میں بھی اس چیز پر ایمان رکھتا ہوں یا نہیں۔ مگر میں ان کا احترام اس وجہ سے کرتا ہوں کہ وہ صحیح معنوں میں ایمان والے ہیں جو اپنے ایمان اور عقیدے کا دفاع کرتے ہیں۔
مسلمان وہ واحد قوم ہیں جو اپنے مذہب کا دفاع کرتے ہیں۔ انہیں کسی قسم کا استہزاء یا گستاخی برداشت نہیں۔ یہی وہ صفت ہے جس کی وجہ سے میں ان کااحترام کرتا ہوں اور یہ ایک بہت ہی حیرت انگیز خوبی ہے۔“
Alfaaz e Jaami
بشکریہ: عظیم الرحمن عثمانی

Add Comment

Click here to post a comment