Home » مُلک کی رواں سال کی سب سے بڑی ڈکیتی!
خبریں

مُلک کی رواں سال کی سب سے بڑی ڈکیتی!

کراچی میں 25 کروڑ کی ڈکیتی کر کے پشاور فرار ہونے والے ملزمان گرفتار!آج پشاور پولیس نے تہکال پولیس اسٹیشن کی حدود سے تین ملزمان کو گرفتار کرلیا۔ یہ ملزمان کراچی سے لوٹی گئ رقم کی سرمایہ کاری کی پلاننگ کررہے تھے۔ یاد رہے کہ 9 اگست کو کراچی کے آئ آئ چندریگر روڈ پر واقع بینک الفلاح کی سیکیورٹی کمپنی کی کیش وین کا ڈرائیور وین میں موجود پچیس کروڑ روپے کیش لے کر فرار ہوگیا تھا۔ اس ڈرائیور کا تعلق KPK سے تھا اور یہ کراچی کے بینک میں بطور ڈرائیور ملازم تھا۔ پولیس نے اس کے ساتھیوں کو بھی گرفتار کرلیا ہے اور لوٹی گئ رقم میں سے 70 لاکھ روپے بھی برامد کرلئے ہیں۔

یاد رہے کہ ملک کے اس سال کی سب سے بڑی ڈکیتی کی تحقیقات کرنے والے پولیس حکام نے 24 اگست کو دعویٰ کیا تھا کہ ڈرائیور کی سہولت کے لیے دو مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے جو کہ ایک سیکورٹی کمپنی کی وین سے مبینہ طور پر 205 ملین روپے لے کر فرار ہوئے تھے۔حکام نے بتایا کہ زیر حراست ملزمان بھائی ہیں اور کیش وین سے 205 ملین روپے منتقل کرنے کے لیے استعمال ہونے والی ہائی روف کے مالک تھے۔پولیس نے بھائیوں کی گاڑی بھی ضبط کرلی تھی۔ حکام نے بتایا کہ زیر حراست بھائی اسد علی اور نعمت علی نے اپنی گاڑی چوری شدہ رقم کی منتقلی کے لئے ان کے بہنوئی ذوالفقار کے حوالے کی تھی۔ پولیس کا خیال تھا کہ ذوالفقار اور مرکزی ملزم حسین شاہ ڈکیتی کی کامیاب واردات کے بعد کراچی سے اپنے آبائ علاقوں یا ملک کے شمالی علاقوں میں فرار ہو گئے ہیں۔اس سلسلے میں کراچی پولیس KPK کی پولیس کے ساتھ رابطے میں تھی اور آج بالآخر پشاور پولیس نے ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے۔ مزید تفتیش جاری ہے۔