Home » نمیب صحرا دُنیا کا قدیم ترین صحرا
معلومات

نمیب صحرا دُنیا کا قدیم ترین صحرا

یہ تصویریں سیارہ مریخ پر نہیں لی گٸیں ہیں بلکہ یہ تصویریں زمین پر موجود نمیب صحرا (namib desert) کی ہیں۔ نیمب صحرا کو دنیا کا سب سے قدیم صحرا سمجھا جاتا ہے۔ نیمیب صحرا (مطلب وسیع جگہ) جنوبی افریقہ میں پھیلا ہوا ہے اور سمجھا جاتا ہے کہ اس کا وجود تقریبا 43 ملین (چار کروڑ تیس لاکھ) سال سے ہے۔ یہ ریت کے ٹیلوں، ناہموار پہاڑوں اور پتھریلی میدانی علاقوں پے مشتمل ہے، اور 81,000 اسکواٸر مربع کلومیٹر تک پھیلا ہوا ہے۔

نیمب صحرا میں موسم گرما کا درجہ حرارت اکثر (45) ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ جاتا ہے اور رات کے وقت درجہ حرارت نکتہ انجماد سے بھی کم ہو سکتا ہے۔ بظاہر نمیب صحرا انسانی آبادی کے لئے موزوں نہیں ہے لیکن حیرت انگیز طور پر یہاں مختلف جانور پاۓ جاتے ہیں۔ جن میں شیر, زرافہ شترمرگ، زیبرا چوہے اور پرندے شامل ہیں جو خود کو اس خطرناک صحرا کے مطابق ڈھالنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ نیمیب صحرا کو دھند (fog) سے پانی کی فراہمی حاصل ہوتی ہے، جسکا مطلب ہے کہ صحرا کے علاقے میں رہنے والے جانوروں کو کم پانی کے استعمال کے ساتھ زندگی بسر کرنی ہوگی۔

نمیب صحرا کے خطے “سوسوسلی” کے علاقے کو ریت کے ٹیلوں کو “اسٹار ٹیل” بھی کہا جاتا ہے کیوںکہ ہر سمت سے ہوا کے قریب آنے کی وجہ سے، ریت کے ٹیلے کسی ستارے جیسی شکل میں تشکیل پاتے ہیں اور اسی کے نتیجے میں وہ بالکل غیر منقولہ ہیں۔ صحرا میں ریت کا رنگ آئرن آکسائڈ کی پرت کی وجہ سے سرخ ہوتا ہے۔ صحرا میں ریت کا رنگ مختلف ہے اندرون ملک کی طرف ریت گلابی رنگت میں نظر آتی ہے جبکہ یہ سمندر کے قریب سفید ہے۔غیر معمولی طور پر بھاری مون سون کے سیزن کے دوران دریائے سوسچاپ کی وجہ سے صحرا میں پانی کی بہتات ہوتی ہے جو پوری دنیاکے سیاحوں کو اس مقام کی طرف کھینچ لاتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment